جمعرات , 1 دسمبر 2022

فلسطینیوں کا قتل عام، اردن سے اسرائیلی سفیرکو ملک بدر کرنے کا مطالبہ

اردن:اردنی ارکان پارلیمنٹ نے جمعرات کی شام اپنے ملک کی حکومت سے عمان سے اسرائیلی سفیر کو نکالنے اور تل ابیب سے اردنی سفیر کو واپس بلانے کا مطالبہ کیا ہے۔ یہ مطالبہ فلسطینی عوام کے خلاف "قابض فوج کے قتل عام” کے رد عمل میں کیا گیا ہے۔

جمعرات کو ایک پارلیمانی میمورنڈم میں ارکان پارلیمنٹ نے زور دیا کہ "ہمارے عوام کے خلاف اسرائیلی قابض ریاست کے مسلسل جرائم نابلس (شمالی مغربی کنارے میں) شہر میں اردن کی قومی سلامتی کو سب سے پہلے خطرے میں ڈال رہے ہیں۔”

پارلیمانی میمورنڈم میں جسے پارلیمنٹ کے اسپیکر عبدالکریم الدغمی کو مخاطب کیا گیا تھا اور جس پر 66 اراکین نے دستخط کیے تھے، رکن پارلیمنٹ خلیل عطیہ نے حکومت پر دباؤ ڈالنے کا مطالبہ کیا کہ وہ اپنی کوششوں اور اقدامات میں اسرائیلی جرائم کی مذمت کی سح کر چیلنج کی سطح تک بڑھنے کے لیے دباؤ ڈالے۔

میمورنڈم میں کہا گیا ہے کہ "اسرائیلی ریاست کی دہشت گردی غیر مسبوق حد تک پہنچ چکی ہے، اس کا ہمارے بہادر فلسطینی عوام کو نشانہ بنانا، قوم اور اردنی عوام کے تمام مقدسات کو نقصان پہنچانے کا منصوبہ ہے۔

 

یہ بھی دیکھیں

نئے آرمی چیف کی تعیناتی پاکستان کا اندرونی معاملہ ہے: امریکا

واشنگٹن: امریکی محکمہ خارجہ نے کہا ہے کہ نئے آرمی چیف کی تعیناتی پاکستان کا …