جمعرات , 1 دسمبر 2022

شیراز میں ہونیوالا دہشتگردانہ حملہ بزدلانہ اور گھناؤنا تھا، جہاد اسلامی فلسطین

تہران:فلسطین کی مقاومتی تحریک "جہاد اسلامی” نے اپنے بیان میں "شیراز” پر دہشت گردانہ حملہ پر ایرانی عوام اور حکومت کو تعزیت پیش کی۔ تفصیلات کے مطابق جہاد اسلامی فلسطین نے آج (جمعہ) ایک بیان میں حضرت احمد بن موسیٰ (ع) کے مزار پر بدھ کو ہونے والے دہشت گردانہ واقعے کی مذمت کی، انہوں نے اس سانحے پر ایرانی حکومت اور عوام سے اظہار تعزیت بھی کیا۔ عرب میڈیا میں جاری اس بیان میں کہا گیا ہے کہ ایران کے شہر "شیراز” میں پیش آنے والا واقعہ دہشت گردانہ اور سفاکانہ ہے، جس میں بے گناہ لوگوں، خواتین، بوڑھوں اور بچوں کو نشانہ بنایا گیا ہے، جو کہ ایک بزدلانہ اور گھناؤنا فعل ہے۔ اس طرح کے واقعات کا اسلام اور انسانیت سے کوئی تعلق نہیں۔ یاد رہے کہ بدھ چھبیس اکتوبر کی شام ایک مسلح شخص امام زادہ شاہ چراغ احمد بن موسیٰ علیہ السلام کے مزار میں داخل ہوا اور زائرین پر گولیاں برسا دیں۔

تازہ ترین اعداد و شمار کے مطابق دہشت گردی کی اس کارروائی میں 15 افراد شہید اور 26 افراد زخمی ہوئے ہیں، جن میں ایک خاتون اور دو بچے بھی شامل ہیں۔ اسی تناظر میں، غیر ملکی خبر رساں اداروں بشمول رائٹرز اور فرانس نیوز نے اعلان کیا کہ داعش نے اس دہشت گردانہ کارروائی کی ذمہ داری قبول کی ہے۔ باخبر ذرائع کا کہنا ہے کہ "حامد بدخشان” دہشت گردی کے اس واقعے کا مرتکب ہے، بعض دیگر ذرائع نے دہشت گردی کے اس واقعے کے ماسٹر مائنڈ کے حوالے سے بتایا کہ وہ غیر ایرانی ہے۔ گذشتہ روز جمعرات کے دن دہشت گرد گروہ داعش نے اپنے ہفت روزہ میگزین "النباء” میں شیراز میں حضرت احمد بن موسیٰ (ع) کے مزار پر بزدلانہ اور گھناؤنے حملے کی ذمہ داری قبول کی۔ النباء داعش کا آفیشل میڈیا شمار کیا جاتا ہے۔

یہ بھی دیکھیں

ثانی زہرا حضرت زینب کبری (س) کا یوم ولادت پوری دنیا میں عقیدت و احترام کیساتھ منایا جارہا ہے

اسلام آباد: بنت علی، ثانی زہرا، شریکہ الحسین، حضرت زینب علیہا سلام کی ولادت باسعات …