ہفتہ , 10 دسمبر 2022

سیکیورٹی خدشات کے پیش نظر لانگ مارچ رات کو سفر نہیں کرے گا:فواد چوہدری

لاہور: تحریک انصاف نے دوسرے دن کا لانگ مارچ مقررہ مقام سے پہلے فیروز والا کے علاقے رچنا ٹاؤن میں ختم کرنے اور پھر تیسرے روز اسے مرید کے سے شروع کرنے کا اعلان کردیا۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ سیکیورٹی خدشات کے پیش نظر پی ٹی آئی دن میں پیش قدمی کرے گی۔

تحریک انصاف کے لانگ مارچ کا آج دوسرے روز شاہدرہ لاہور سے آغاز ہوا جو عمران خان کی قیادت میں فیروز والا پہنچا، وقت کی قلت کی وجہ سے سادھو اور کامونکی جانے کے بجائے پی ٹی آئی قیادت نے اسے فیروز والہ کے مقام پر ہی ختم کرنے کا اعلان کیا۔

پی ٹی آئی کے رہنما فواد چوہدری نے سماجی رابطے کی سائٹ پر اپنے پیغام میں بتایا کہ ’دوسرے دن کا مارچ ختم ہوگیا، صبح مرید کے سے قافلہ دوبارہ شروع ہوگا‘۔

پاکستان تحریک انصاف کے ذرائع نے بتایا کہ سیکیورٹی کے پیش نظر لانگ مارچ صرف دن میں ہی جاری رہے گا اور رات کو قافلہ سفر نہیں کرے گا‘۔ ذرائع کے مطابق پی ٹی آئی قیادت نے فیصلہ کیا ہے کہ لاہور سے باہر کسی جگہ رات کو سفر نہیں کیا جائے گا۔

عمران خان کے مرکزی کنٹینر میں پی ٹی آئی رہنما شاہ محمود قریشی، اسد عمر، عمر ایوب ،فواد چوہدری ، شہباز گل، ڈاکٹر یاسمین راشد بھی موجود ہیں۔

فیروز والہ میں کارکنان اور عوام سے خطاب کرتے ہوئے عمران خان نے کہا کہ ’کوئی آزادی آپ کو دیتا نہیں بلکہ آزادی چھیننا پڑتی ہے، زنجیریں گرتی نہیں زنجیریں توڑنی پڑتی ہیں‘۔ انہوں نے کہا کہ سازش کر کے ملک پر امپورٹڈ حکومت مسلط کی گئی جس سے ہمیں ملک کو آزاد کروانا ہے جدوجہد کرنی ہے۔

مارچ کامونکی سے گوجرانوالہ پہنچے گا اور ڈسکہ سے ہوتا ہوا سیالکوٹ پہنچے گا۔ لانگ مارچ ، سمبڑیال، وزیر آباد سے ہوتا ہوا گجرات پہنچے گا۔ لالہ موسی کھاریاں سے جہلم جائے گا۔ گوجر خان سے راولپنڈی اور چار نومبر جمعے کو راولپنڈی سے اسلام آباد میں داخل ہوگا۔

یہ بھی دیکھیں

ارکان اسمبلی حکومت پر جلد انتخابات کا دباؤ ڈالنے کے لیے ملک بھر میں ریلیاں نکالیں۔عمران خان

لاہور: پاکستان تحریک انصاف کے اراکین اسمبلی نے عمران خان کے اسمبلی تحلیل کرنے اور …