پیر , 28 نومبر 2022

امریکہ نے شام کے درجنوں آئل ٹینکرز چرا لیے

دمشق:امریکی دہشتگردوں نے شمالی شام کے صوبہ الحسکہ کے مضافات سے شام کے 55 آئل ٹینکرز چوری کر لیے۔اطلاعات کے مطابق امریکی جارحیت پسندوں نے اپنے زیر قبضہ علاقوں سے شام کی قومی دولت کی لوٹ مار کا سلسلہ جاری رکھتے ہوئے حسکہ کے مضافات میں مزید درجنوں ٹن شامی تیل چوری کر کے شمالی عراق میں اپنے اڈوں پر منتقل کر دیا۔

الحسکہ کے مقامی ذرائع نے سانا کے رپورٹر کو بتایا کہ اتوار کے روز امریکی قابض افواج کے 55 ٹرکوں اور کاروں کا ایک قافلہ جو شام کا چوری شدہ تیل لے کر جا رہے تھے، المحمودیہ کی غیر قانونی سرحدی گزرگاہ سے عراقی حدود میں داخل ہوئے۔

گزشتہ ہفتوں کے دوران امریکی افواج کی جانب سے شامی تیل کی چوری کا سلسلہ تیز ہوگیا ہے اور شامی تیل لے جانے والے سیکڑوں ٹینکرز کو غیر قانونی گزرگاہوں کے ذریعے عراق میں امریکی اڈوں پر منتقل کردیا گیا ہے۔

امریکی جارحیت پسندوں نے 16 اکتوبر کو شام سے 50 آئل ٹینکرز عراق میں اپنے اڈے پر منتقل کیے تھے۔

دسمبر 2016 میں شام میں امریکی فوجی دستے کے طور پر داعش دہشت گرد گروہ کی شکست کے بعد، امریکی افواج نے براہ راست اس گروہ کی جگہ لے لی اور عین وقت سے داعش کی بجائے شام کا تیل نکالنا اور چوری کرنا شروع کر دیا۔

الحسکہ اور شام کے دوسرے شمالی علاقوں میں امریکی افواج اور "سیرین ڈیموکریٹک فورسز” (ایس ڈی ایف) کے نام سے جانی جانے والی ملیشیاؤں کے زیر قبضہ علاقے ہمیشہ دہشت گردوں کی موجودگی کے خلاف شامی شہریوں کے احتجاج کے گواہ رہے ہیں۔ ان علاقوں کے مکینوں کے خلاف قابضین اور ملیشیاؤں کی کارروائیاں۔

شامی حکومت نے بارہا اس بات پر زور دیا ہے کہ شام کے مشرق اور شمال مشرق میں ان ملیشیاؤں اور امریکیوں کا تیل کی لوٹ مار کے علاوہ کوئی اور مقصد نہیں اور ان کی موجودگی غیر قانونی ہے۔

یہ بھی دیکھیں

بی جے پی کے رکن اسمبلی کی غنڈہ گردی؛ بس اسٹینڈ پر بنے گنبدوں کو ہٹادیا

میسور: کرناٹک میں مودی سرکار کے رکن اسمبلی نے ایک بس اسٹاپ پر بنے اسٹینڈ …