پیر , 5 دسمبر 2022

نیب کو عثمان بزدار اور مونس الٰہی کے خلاف کارروائی سے روک دیا گیا

لاہور:لاہور ہائی کورٹ نے قومی احتساب بیورو(نیب) کو سابق وزیراعلیٰ پنجاب عثمان بزدار اور سابق وفاقی وزیر مونس الٰہی کے خلاف تحقیقات کے سلسلے میں سخت اقدامات کرنے سے روک دیا۔

رپورٹ کے مطابق مونس الٰہی کی جانب سے دائر درخواست پر سماعت کرتے ہوئے جسٹس علی باقر نجفی کی سربراہی میں دو رکنی بینچ نے نیب کو 7 نومبر تک جواب جمع کرانے کے لیے نوٹس جاری کیا۔

اس سے قبل مونس الٰہی کی جانب سے ایڈووکیٹ امجد پرویز نے عدالت کے روبرو دلائل دیتے ہوئے کہا کہ نیب نے احتساب عدالت کی اجازت کے بغیر پہلے سے بند انکوائری کو دوبارہ کھول دیا، انہوں نے کہا کہ نیب نے جامع تحقیقات کے بعد درخواست گزار اور اس کے اہل خانہ کو کلیئر کر دیا ہے۔

وکیل نے کہا کہ نیب نے سیاسی بنیادوں پر درخواست گزار اور دیگر کو طلبی کے نوٹس جاری کیے، انہوں نے عدالت سے کہا کہ بیورو کی جانب سے جاری کیے نوٹس کو غیر قانونی قرار دے کر انہیں خارج کیا جائے۔تاہم بینچ نے نیب سے جواب طلب کرتے ہوئے اسے درخواست گزار کے خلاف کارروائی سے روک دیا۔

ملتان میں عثمان بزدار کی درخواست پر سماعت کرتے ہوئے جسٹس شکیل احمد کی سربراہی میں لاہور ہائی کورٹ کے ڈویژن بینچ نے نیب کو درخواست گزار کے خلاف سخت کارروائی سے روکتے ہوئے 7 نومبر تک جواب طلب کر لیا۔

سابق وزیراعلیٰ کی جانب سے وکیل مومن ملک نے دلائل دیتے ہوئے کہا کہ نیب نے درخواست گزار کے خلاف بے بنیاد انکوائری شروع کی اور عدالت سے استدعا کی کہ وہ غیر قانونی انکوائری کو ایک طرف رکھے اور درخواست گزار کے خلاف شروع کی گئی دیگر تمام انکوائریوں کی تفصیلات بھی طلب کرے۔

نیب سابق وزیراعلیٰ بزدار کے دور میں محکمہ کمیونیکیشن اینڈ ورک میں مبینہ غیر قانونی ترقیوں پر انکوائری کر رہا ہے۔

یہ بھی دیکھیں

کراچی سمیت سندھ بھر میں آج یوم ثقافت منایا جارہا ہے

کراچی:کراچی سمیت سندھ بھر میں آج سندھ کی ثقافت کو اجاگر کرنے کا دن انتہائی …