پیر , 5 دسمبر 2022

اسرائیل مزید تقسیم کی طرف بڑھ رہا ہے:اسرائیلی وزیر دفاع بینی گینٹز

مقبوضہ بیت المقدس:”آفیشل معسکر کیمپ” اتحاد کے سربراہ اور قابض اسرائیلی وزیر دفاع بینی گینٹز نے کہا ہے کہ ایک ایسے وقت میں جب "اسرائیل” تقسیم اور انتہا پسندی کی طرف بڑھ رہا ہے، سیاسی بلاکس کو عبور کرنے والی ایک مرکزی جماعت قائم کرنے کی ضرورت ہے۔

گینٹز جو کہ وزیر اعظم یائر لپیڈ کے ساتھ انتخابی اتحاد کا حصہ تھےنے خبر دار کیا کہ اسرائیل سیاسی طور پر مزید تقسیم کی طرف بڑھ رہا ہے۔ یائبرلپیڈ کی فیوچر پارٹی اور بینی گینٹز کی معسکر کیمپ دونوں مل کرانتخابات میں حکومت سازی کے لیے درکار کامیابی حاصل نہیں کرسکی ہیں۔ جب کہ بنجمن نیتن یاھو کی جماعت لیکوڈ پارٹی ایک بار پھر جیت گئی ہے۔

گینٹز نے ٹویٹس میں کہا کہ یہ میرے لیے ایک مشکل ویک اینڈ ہے۔انتخابی نتائج شاندار اور غیر واضح ہیں، ہمیں انہیں قبول کرنا چاہیے اور ان کا احترام کرنا چاہیے اور جمہوریت میں جیسا کام کرنا چاہیے۔”

انہوں نے مزید کہا کہ میں سمجھتا ہوں کہ اسرائیل کی ریاست کی تقسیم اور انتہا پسندی کے وقت، ایک کراس بلاک سینٹرسٹ پارٹی کی ضرورت ہے۔”

آج یہ ضروری ہے کہ ہم اس صلاحیت پر یقین رکھیں۔ بالکل آج جب کہ بہت سے عوام مایوسی، ناامیدی اور یہاں تک کہ خوف محسوس کر رہے ہیں۔ ہم اپنے بچوں کو وطن کے دفاع کے لیے فوج میں بھیجتے رہیں گے۔ ہم اپنے بچوں کو رواداری اور لوگوں سے محبت کا درس دیتے رہیں گے۔ ہم قانون اور انصاف کے نظام کا احترام اور برقرار رکھیں گے۔”

نیتن یاہو کے کیمپ، سابق وزیر اعظم (2009-2021) نے کنیسٹ میں 120 میں سے 64 نشستیں جیتیں، جو انہیں آسانی سے حکومت بنانے کے اہل بناتی ہے۔

نیتن یاہو کے اتحاد میں مذہبی "شاس” اور "متحدہ تورات یہودیت” (حریدیم) کی زیر قیادت "لیکود” پارٹی کے علاوہ، اور سخت گیر بیزیل سموٹریچ اور اتمار بین گویر کی قیادت میں "مذہبی صیہونیت” اتحاد شامل ہے۔

 

یہ بھی دیکھیں

موساد کو اسرائیل کے حکام کی ناکامی کا علم ہے: ایران

تہران:ایران کے ایک اعلی سکیورٹی آفیسر نے کہا ہے کہ اسرائیل کی بد نام زمانہ …