ہفتہ , 10 دسمبر 2022

وزیراعظم، آئی جی یا جج ایک ہی سرکاری گھر رکھ سکے گا، اسلام آباد ہائیکورٹ

اسلام آباد: اسلام آباد ہائیکورٹ نے ہدایت کی آئی جی اسلام آباد آئی جی ہاؤس یا جی ایٹ کے گھر میں سے ایک ہی رکھ سکتے ہیں 2نہیں رکھ سکتے،وزیراعظم ہو، آئی جی ہو یا ہائیکورٹ کا جج ہو گھر ایک ہی رکھ سکے گا۔

جسٹس محسن اختر کیانی نے سیکشن افسر کی بیدخلی سے متعلق درخواست پرمختصر فیصلے میں کہا اسلام آباد میں کتنے سول سرونٹس نے دو ،دو گھر رکھے ہوئے ہیں، سیکریٹری ہاؤسنگ 3ماہ میں رپورٹ دیں،صوبوں میں جانے والے کتنے سول سرونٹس نے اسلام آباد میں گھر رکھے ہوئے ہیں،یہ رپورٹ بھی دیں، وہ بھی ایک ہی گھر رکھ سکتے ہیں ۔سیکشن افسر کی جی ایٹ میں گھر کا قبضہ واپس دینے کی درخواست مسترد کرتے ہوئے عدالت نے وزارت داخلہ کے سیکشن افسر کو 24 گھنٹے میں نئے گھر کا قبضہ دینے کی ہدایت کردی۔

جسٹس محسن اختر کیانی نے دہری مراعات والوں پر برہمی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کوئی بھی سرکاری ملازم پاکستان بھر میں صرف ایک ہی سرکاری گھر رکھ سکتا ہے، سب نے مذاق بنایا ہوا ہے، دہری مراعات انجوائے کر رہے ہیں، سب کو پلاٹ بھی دو دو چاہئے اور مکان بھی دو دو چاہئے،جو دوسرے صوبے سے اسلام آباد آیا وہ کیا وہاں سے گھر خالی کر کے آتا ہے؟ایسے کتنے افسر ہیں جن کی کہیں اور پوسٹنگ ہو چکی لیکن اسلام آباد میں گھر اب بھی موجود ہے؟سیکرٹری ورکس کی طرف سے بیان حلفی لکھ لوں کہ ہر افسر کے پاس ملک بھر میں ایک ہی گھر ہے؟اگر اسلام آباد کے علاوہ ان کے کہیں گھر ہوں تو پھر سیکرٹری کیخلاف کارروائی ہو گی،سرکاری افسر پورے پاکستان میں ایک ہی گھر رکھ سکتا ہے۔

علاوہ ازیں ایس ایس جی کمانڈو میجر لاریب قتل کیس میں ہائیکورٹ نے عدم ثبوت پر دو مجرموں کی سزا کے خلاف اپیلیں منظور کرتے ہوئے سزائے موت کے قیدی بیت اللہ اور عمر قید کے قیدی صدیق گل کو بری کردیا۔

جسٹس محسن اختر کیانی اور جسٹس ارباب طاہر نے مختصر فیصلہ سنا دیا، عدالت نے گزشتہ ماہ فیصلہ محفوظ کیا تھا۔ مجرم بیت اللہ کو سزائے موت جبکہ گل صدیق کو عمر قید کی سزا ہوئی تھی۔

دریں اثنا اسلام آباد میں سب جیل تشکیل دینے اور پی ٹی آئی کارکن کو حبس بے جا میں رکھنے کیخلاف ہائیکورٹ نے ڈپٹی کمشنر کو آج ذاتی حیثیت میں طلب کر لیا۔

یہ بھی دیکھیں

ارکان اسمبلی حکومت پر جلد انتخابات کا دباؤ ڈالنے کے لیے ملک بھر میں ریلیاں نکالیں۔عمران خان

لاہور: پاکستان تحریک انصاف کے اراکین اسمبلی نے عمران خان کے اسمبلی تحلیل کرنے اور …