جمعرات , 1 دسمبر 2022

اسرائیلی حکومت کا شامی سرزمین پر 72 گھنٹے تک آپریشن کرنے کا دعویٰ

یروشلم:صیہونی حکومت نے ایک رپورٹ شائع کرتے ہوئے دعویٰ کیا ہے کہ غاصب فوجیوں کے دستوں نے 72 گھنٹے تک مقبوضہ جولان میں سرحدی باڑ کی دوسری جانب شام کی سرزمین کے اندر آپریشن کیا۔

فارس خبر رساں ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق صیہونی حکومت کے کان- 11 ٹی وی چینل نے دعویٰ کیا ہے کہ اسرائیلی فوجیوں نے 72 گھنٹے تک مقبوضہ جولان میں سرحدی باڑ کی دوسری جانب سے شام کی سرزمین میں گھس کر 25 سے زائد ٹینکوں، بکتر بند اور فوجی گاڑیوں کے ساتھ یہ آپریشن انجام دیا۔

اس ٹیلی ویژن چینل پر 13 نومبر اتوار کی شب نشر ہونے والی اس رپورٹ کے مطابق، اس مشن میں غاصب صیہونی فوجیوں کا مقصد "شام میں اسرائیل کے زیر کنٹرول علاقے میں سڑکوں کو کھولنا اور ان لوگوں کے بارے میں اطلاعات حاصل کرنا ہے جو اسرائیلی فوج پر حملہ کرنے کا ارادہ رکھتے ہیں۔

اس ٹی وی چینل نے جولان میں مذکورہ فوجی آپریشن کے وقت کا ذکر کیے بغیر اپنی بات جاری رکھی اور دعویٰ کیا کہ صیہونی حکومت کی زمینی افواج نے 72 گھنٹے تک مسلسل چلنے والے اس آپریشن میں 25 ٹینکوں، بکتر بند گاڑیوں اور فوجی بلڈوزروں کی مدد لی گئی۔

"عرب- 48” ویب سائٹ کے مطابق، صیہونی حکومت کے ایک افسر نے اس رپورٹ میں دعویٰ کیا ہے کہ اس دراندازی کا بنیادی مقصد علاقے میں غاصب افواج کی "موجودگی” کو ثابت کرنا اور اس بٹالین کی طاقت ظاہر کرنا ہے۔

اس رپورٹ میں یہ بھی دعویٰ کیا گیا کہ صیہونی فوج مقبوضہ جولان کو الگ کرنے والی حفاظتی باڑ کے ساتھ شامی سرزمین کے اندر تقریباً 2 کلومیٹر کے فاصلے پر کنٹرول رکھتی ہے۔

 

یہ بھی دیکھیں

چین کی بڑھتی دفاعی طاقت نے امریکا کو پریشان کر دیا

واشنگٹن:چین کی بڑھتی ہوئی دفاعی طاقت نے امریکا کو پریشان کر دیا ہے، امریکی محکمہ …