بدھ , 7 دسمبر 2022

روس کے زیر کنٹرول یوکرین کے نیوکلیئر پاور پلانٹ گولہ باری سے لرز اٹھا

واشنگٹن: روس کے زیر کنٹرول یوکرین کے نیوکلیئر پاور پلانٹ گولہ باری سے لرز اٹھا جس پر اقوام متحدہ کے جوہری نگران ادارے نے مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ اس طرح کے حملوں سے ایک بڑی جوہری تباہی کا خطرہ ہے۔

الجزیرہ کی رپورٹ کے مطابق انٹرنیشنل اٹامک انرجی ایجنسی (آئی اے ای اے) نے کہا کہ شام اور اتوار کی درمیان رات کو ایک درجن سے زیادہ دھماکوں نے یورپ کے سب سے بڑے جوہری پاور پلانٹ کو ہلا کر رکھ دیا۔ ماسکو اور کیف دونوں نے ایک دوسرے پر اس تنصیب پر گولہ باری کا الزام لگایا ہے۔

آئی اے ای اے کے سربراہ رافیل گروسی نے کہا کہ ہماری ٹیم کی کل اور آج صبح کی خبریں انتہائی پریشان کن ہیں، اس بڑے ایٹمی پاور پلانٹ کے مقام پر دھماکے ہوئے جو کہ مکمل طور پر ناقابل قبول ہے، اس کے پیچھے جو بھی ہے اسے فوراً روکنا چاہیے جیسا کہ میں پہلے بھی کئی بار کہہ چکا ہوں تم آگ سے کھیل رہے ہو۔

پلانٹ مینجمنٹ کی طرف سے فراہم کردہ معلومات کا حوالہ دیتے ہوئےآئی اے ای اے ٹیم نے کہا کہ سائٹ پر کچھ عمارتوں، سسٹمز اور آلات کو نقصان پہنچا ہے لیکن ان میں سے کوئی بھی جوہری حفاظت اور سلامتی کے لیے اب تک اہم نہیں ہے۔

یہ بھی دیکھیں

بزدل صیہونی حکومت الہیٰ روایت کی بنیاد پر زوال پذیر ہے، جنرل عبدالرحیم موسوی

تہران:اسلامی جمہوریہ ایران کی فوج کے سربراہ میجر جنرل سید عبدالرحیم موسوی نے صحافیوں سے …