جمعرات , 8 دسمبر 2022

آرمی چیف کی تعیناتی پر عارف علوی مجھ سے بطور پارٹی سربراہ مشاورت کرسکتے ہیں، عمران خان

لاہور: پاکستان تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان نے کہا ہے کہ صدر عارف علوی میرے ساتھ رابطے میں ہیں اور وہ تقرری کی سمری پر مشورہ کریں گے۔نجی ٹی وی کو دیے گئے انٹرویو میں عمران خان نے کہا کہ صدر عارف علوی میرے ساتھ رابطے میں ہیں،صدر کے پاس جو بھی میری سمری جائے گی، وہ میرے ساتھ مشورہ کریں گے۔

عمران خان نے کہا کہ جب وزیراعظم اہم تقرری کے معاملے پر مفرور شخص کے پاس مشاورت کیلیے جاسکتا ہے تو عارف علوی مجھ سے بطور پارٹی سربراہ مشاورت کرسکتے ہیں۔

چیئرمین پی ٹی آئی نے کہا کہ ’لندن میں مقیم مسلم لیگ ن کے سابق ترجمان تسنیم حیدر کی باتوں میں کتنی سچائی ہے میں نہیں جانتا ہم کوئی ایسا کام نہیں کریں گے جو خلاف قانون ہو‘۔

علاوہ ازیں لاہور زمان پارک میں اپنی رہائش گاہ پر سینئر صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے عمران خان نے کہا کہ آرمی چیف کی تعنیاتی میرٹ پر ہونی چاہیے، لندن میں بیٹھا مجرم کیسے آرمی چیف لگا سکتا ہے، پسند کا آرمی چیف لگانے کا مقصد صرف تحریک انصاف کو نقصان پہنچانا ہے۔‘

واضح رہے کہ جی ایچ کیو کی جانب سے گزشتہ شب پاک فوج میں اہم تعیناتیوں کے لیے 6 لیفٹینںٹ جنرلز کے نامور کی سمری وزارت دفاع کو بھیجی گئی جس کے بعد اسے وزیراعظم ہاؤس بھیجا گیا۔

وزیراعظم شہباز شریف اتحادی جماعتوں کی مشاورت کے بعد اپنا آئینی اختیار استعمال کرتے ہوئے چیئرمین جوائنٹ چیفس آف اسٹاف اور آرمی چیف کے ناموں کی منظوری دیں گے جس کے بعد اسے منظوری کیلیے صدر مملکت کو ارسال کیا جائے گا۔

یہ بھی دیکھیں

امریکا کا ٹی ٹی پی اور داعش خراسان کے گرد گھیرا تنگ کرنے کا فیصلہ

واشنگٹن:امریکا نے کالعدم داعش-خراسان گروپ اور کالعدم جماعت تحریک طالبان پاکستان جیسے عسکریت پسند گروپوں …