جمعہ , 9 دسمبر 2022

اسرائیل کے 11 پائلٹ مصر میں کیوں داخل ہوئے؟

قاہرہ:مصر سے 11 صیہونی پائلٹوں کی بے دخلی کی تفصیلات سامنے آ گئی ہیں۔عبرانی میڈیا نے گزشتہ روز 11 صیہونی پائلٹوں کو مصر سے نکالے جانے کے قاہرہ کے اقدامات کی تازہ تفصیلات شائع کی ہیں۔

بعض عبرانی ذرائع ابلاغ نے جمعرات 24 نومبر کو مصر کی جانب سے 11 اسرائیلی پائلٹوں کو ملک بدر کرنے کی نئی تفصیلات شائع کیں جو بدھ کو اس ملک کے لیے روانہ ہوئے اور قاہرہ نے انہیں مصر میں داخل ہونے سے روک دیا۔صیہونی حکومت کے کان چینل نے اطلاع دی تھی کہ مصر نے 11 صیہونی پائلٹوں کو ملک بدر کر دیا ہے۔

صیہونی حکومت کے "کان” ٹی وی چینل نے اس سلسلے میں رپورٹ دی ہے کہ مصر میں پیش آنے والا یہ واقعہ ان دو فریق کے درمیان غیر معمولی ہے جن کے درمیان بظاہر برسوں سے امن معاہدہ تھا۔ چار ہلکے طیاروں کے ساتھ مصری فضائی حدود میں داخل ہونے کے بعد اسرائیلی پائلٹ ابھی تک مصر میں پھنسے ہوئے ہیں۔

اس ٹی وی چینل نے دعویٰ کیا کہ صیہونی پائلٹوں نے پہلے لینڈنگ کی اجازت حاصل کی تھی اور بدھ کی شام مصر کی فضائی حدود میں داخل ہوئے تھے لیکن انہیں مصری حدود میں داخل ہونے کی اجازت نہیں دی گئی اور مصری

ٹی وی چینل نے یہ بھی اطلاع دی ہے کہ صیہونی پائلٹوں کو طویل انتظار کے بعد مصر کی "قومی سلامتی” سے متعلق وجوہات کی بنا پر اپنے طیاروں میں واپس آنے کو کہا گیا تھا تاہم پائلٹس نے اعلان کیا کہ ان کے پاس اتنا ایندھن نہیں ہے کہ وہ مقبوضہ فلسطین واپس جا سکیں تاہم طیاروں کو ایندھن فراہم کرنے کی درخواست کی مصر کی جانب سے بھی مخالفت کی گئی اور انہیں ایندھن بھرنے کی اجازت نہیں دی گئی۔

اس رپورٹ کے مطابق مصریوں نے پائلٹوں کو اپنے طیاروں کے ساتھ مصر چھوڑنے پر مجبور کیا لیکن موسمی حالات ان طیاروں کے لیے مقبوضہ فلسطین واپس جانے کے لیے سازگار نہیں تھے۔

اس سلسلے میں صیہونی حکومت کی وزارت خارجہ نے مصر میں صیہونی پائلٹوں کے ساتھ پیش آنے والے واقعے کی تصدیق کرتے ہوئے سفارتی ذرائع سے کہا ہے کہ یہ واقعہ رونما ہوا اور اسرائیلی حکام اس معاملے کی تحقیقات کر رہے ہیں۔

 

یہ بھی دیکھیں

فیصل واؤڈا کی سینیٹ رکنیت بحال ہونے کا نوٹی فکیشن جاری

اسلام آباد: الیکشن کمیشن آف پاکستان نے فیصل واؤڈا کی سینیٹ نشست پر بحالی کا …