بدھ , 8 فروری 2023

امریکہ عراق اور شام میں داعش کو دوبارہ فعال کرنے کی کوشش کر رہا ہے:سید فارس السعید

دمشق:شام میں سماجی اور نسلی سلامتی کے مسائل کے محقق "سید فارس السعید” نے امریکہ کی جانب سے عراق اور شام میں افراتفری اور تخریب کاری اور حکومتی اداروں کو بند کرنے کے لیے اپنے غیر فعال دہشت گرد سیلوں کو آگے بڑھانے کی کوشش کے بارے میں خبردار کیا۔

سعید نے عراقی نیوز ویب سائٹ "الملومہ” کے ساتھ ایک انٹرویو میں کہا کہ امریکہ اور صیہونی حکومت نے اپنے مفادات کے ذریعے خطے میں غیر فعال دہشت گرد سیل تشکیل دیے ہیں، جنہیں حکم دیا جا سکتا ہےکہ وہ افراتفری اور توڑ پھوڑ اور عراق اور شام میں سرکاری اداروں کو بند کرے۔

سعید نے مزید کہا: اسلامی دنیا میں مغربی اور صیہونی حکومتیں اور بعض مفاہمت پسند حکومتیں آزاد ممالک اور ہماری سرزمین کے استحکام میں خلل ڈالنے اور ہماری دولت ہتھیانے اور اپنے مفادات کے مطابق ہمارے ملکوں کو کمزور اور تقسیم کرنے اور مشکوک منصوبوں کو عملی جامہ پہنانے کے لیے۔ امریکی حکومت کے ساتھ مکمل تعاون اور ہم آہنگی میں ہیں۔

انہوں نے اشارہ کیا: مغربی ممالک نے گھیراؤ اور اقتصادی جنگ اور خطے اور ہمارے ممالک اور علاقوں میں دہشت گرد گروہوں کی لامحدود حمایت کی پالیسی اپنا رکھی ہے۔

اس شامی تجزیہ نگار نے کہا کہ مشرق وسطیٰ میں امریکہ، مغرب، صیہونی حکومت اور ان کی ہمنوا حکومتوں کے شام کے خلاف جنگ جاری رکھنے اور اس ملک کے خلاف اقتصادی ناکہ بندی کرنے کے ہدف کے سلسلے کو جارہ رکنا چاہتے ہے۔

سعید نے کہا: امریکیوں نے اس بات کو یقینی بنا لیا ہے کہ وہ شام کی قوم، فوج، اس کے اتحادیوں اور دوستوں میں ظاہر ہونے والی طاقت کو ختم نہیں کر سکتے اور اسی وجہ سے انہوں نے مشکل سے فائدہ اٹھانے کے لیے سوئے ہوئے مرکزوں کو بیدار کرنے کا فیصلہ کیا۔ مشکل معاشی صورتحال اور معاشی ناکہ بندی اور قیمتوں میں اضافے اور ایندھن کی کمی کے نتیجے میں پیدا ہونے والا ذریعہ معاش، خود چوری اور لوٹ مار، افراتفری اور بدامنی کا باعث بنتی ہے۔

انہوں نے تاکید کی: شامی عوام کو ضروری خوراک اور پیٹرولیم مصنوعات کی فراہمی کے لیے مشترکہ اور فوری کوشش سے ہم اس مرحلے پر دشمن کو فیصلہ کن اور فوری جواب دے سکتے ہیں۔

یہ بھی دیکھیں

ایران نے ایگل 44 آپریشنل ایئر بیس کی نقاب کشائی کردی

تہران:ایران کی مسلح افواج کے چیف آف جنرل اسٹاف جنرل پاسدار محمد باقری اور ایران …