اتوار , 5 فروری 2023

روس: ایٹمی آبدوزوں اور جنگی بحری جہازوں کی رونمائی

ماسکو:روسی صدر ولادیمیر پوتین کی آنلائن شرکت سے روس کی دو آبدوزوں اور کئی بحری جنگی جہازوں کی رونمائی کی تقریب منعقد ہوئی۔ ینگ جرنسلٹ کلب کی رپورٹ کے مطابق روس کی نوو اوگاریو بندرگاہ پر منعقدہ اس تقریب کے موقع پر دو ایٹمی آبدوزوں اور تین جنگی بحری جہازوں کو روسی بحریہ میں شامل کیا گیا۔

روسی صدر نے اس تقریب سے اپنے آنلائن خطاب میں روس کی دفاعی توانائی مزید مصبوط بنائے جانے کی ضرورت پر زور دیتے ہوئے تاکید کی کہ روس کی مسلح افواج کو ہر قسم کے خطرے کے مقابلے میں زیادہ سے زیادہ مضبوط و مستحکم کیا جا ئے گا۔

روس کی جانب سے بحریہ میں ایٹمی آبدوزوں اور بحری جنگی جہازوں کو شامل کئے جانے کا یہ اقدام ایسی حالت میں عمل میں لایا گیا ہے کہ یوکرین کی جنگ جاری ہے اور روس کے اس اقدام سے اس کی بحری طاقت میں مزید اضافہ ہوا ہے۔

دریں اثنا روس اور بیلا روس کی وزارت دفاع نے اعلان کیا ہے کہ بیلاروس میں دونوں ملکوں کی مشترکہ فوجی مشقیں جاری ہیں۔روس کی وزارت دفاع نے ان فوجی مشقوں کا مقصد جنگی امور میں ہم آہنگی پیدا کرنا قرار دیا۔

اس سےقبل قصر کریملین کے ترجمان نے اعلان کیا تھا کہ بیلا روس کو روس کی مکمل فوجی حمایت حاصل ہے اور مینسک پر کسی بھی طرح کے حملے کو ماسکو پر حملے کے مترادف سمجھا جائے گا۔

 

یہ بھی دیکھیں

بھارت کا روسی پیٹرول کی ادائیگیاں ڈالر کے بجائے درہم میں کرنے کا فیصلہ

نئی دہلی: بھارت نے روس سے تیل کی خریداری کے لیے ادائیگی ڈالر کے بجائے …