جمعرات , 2 فروری 2023

چین نے اپنے مسافروں پر سفری پابندیوں کو ناقابل قبول قرار دے دیا

بیجنگ:چین میں زیرو کووڈ پالیسی ختم کرنے کے بعد کورونا کیسز میں خطرناک حد تک اضافہ دیکھنے میں آیا ہے۔
غیر ملکی میڈیا نے خبر دی ہے کہ دنیا کے درجن سے زائد ممالک نے کورونا خطرے کے پیش نظر چین سے آنے والے مسافروں پر پابندی لگا دی تھی جس کو چین نے ناقابل قبول قرار دیا ہے۔

واضح رہے کہ کورونا خطرے کے پیش نظر امریکہ، کینیڈا، جاپان اور فرانس سمیت ایک درجن سے زائد ممالک نے چین سے آنے والے مسافروں پر پابندیاں عائد کر دی ہیں۔

امریکہ، کینیڈا، جاپان اور فرانس ان ممالک میں شامل ہیں جنہوں نے چین سے آنے والے تمام مسافروں کو آمد سے قبل کورونا ٹیسٹ کی منفی رپورٹ دکھانے کی شرط عائد کی ہے۔

یاد رہے کہ چین میں کورونا کیسز میں بڑی تیزی سے اضافہ اس وقت ہوا جب چین نے دسمبر میں اپنی زیرو کووڈ پالیسی کو اچانک ختم کر دیا تھا۔

کورونا کی اس غیر معمولی تشویشناک صورتحال کے باوجود بیجنگ نے ایک طویل انتظار کے بعد اپنی سرحدیں دوبارہ کھولنے کا فیصلہ کیا اور گزشتہ ہفتے چین آمد پر لازمی قرنطینہ کے خاتمے کا اعلان کیا ہے۔

غیر ملکی میڈیا کی رپورٹس کے مطابق چین کے اس اقدام نے چینی لوگوں کو بیرون ملک دوروں کی منصوبہ بندی کرنے پر اکسایا، جس سے دنیا بھر کے ممالک نے چین سے آنے والے مسافروں پر پابندیاں عائد کر دی ہیں۔

چینی وزارت خارجہ کے ترجمان ماؤ ننگ نے منگل کو ایک باقاعدہ بریفنگ میں بتایا کہ کچھ ممالک نے صرف چینی مسافروں کو نشانہ بناتے ہوئے داخلے پر پابندیاں لگائی ہیں۔

ترجمان ماؤ ننگ نے مزید کہا کہ اس میں سائنسی بنیادوں کا فقدان ہے اور کچھ طرز عمل ناقابل قبول ہیں، انہوں نے مزید کہا کہ چین باہمی اصول کی بنیاد پر جوابی اقدامات کر سکتا ہے۔

 

یہ بھی دیکھیں

روس نے یوکرین پر بڑے حملے کی تیاری شروع کردی، یوکرین پر بمباری بھی جاری

ماسکو :روس نے یوکرین پر بڑے حملے کی تیاری شروع کردی اور اس سلسلے میں …