منگل , 31 جنوری 2023

اسرائیلی کمپنی پرسوشل میڈیا پر چھ لاکھ صارفین کی جاسوسی کا الزام

واشنگٹن:فیس بک اور انسٹاگرام کی مالک کمپنی میٹا نے اسرائیلی نگران فرم وائجر لیبز پر الزام لگایا ہے کہ اس نے فیس بک اور انسٹاگرام کے تقریباً 600,000 صارفین کا ڈیٹا خفیہ طور پر اکٹھا کرنے کے لیے دسیوں ہزار جعلی اکاؤنٹس اور جدید ٹریکنگ ٹولز کا استعمال کیا۔

’گارڈین‘ اخبار کے مطابق میٹا نے وائجر لیبز کو فیس بک اور انسٹاگرام استعمال کرنے سے روکنے کے لیے مقدمہ کیا ہے۔

میٹا کی جانب سے دائر کیے گئے مقدمے میں کہا گیا ہے کہ فیس بک نے اسرائیلی کمپنی کے بنائے گئے 38,000 جعلی اکاؤنٹس کو ڈیلیٹ کیا، جس کے دفاتر امریکا، برطانیہ، اسرائیل، سنگاپور اور متحدہ عرب امارات میں ہیں جنہیں وہ ایک کمپنی کے ذریعے تحقیق اور ترقی کے لیے استعمال کرتی ہے۔

مقدمے میں یہ بھی کہا گیا ہے کہ وائجر لیبز نے مانیٹرنگ سافٹ ویئر استعمال کیا جو جعلی اکاؤنٹس کا استعمال کرتے ہوئے ٹویٹر، یوٹیوب، لنکڈ ان اور ٹیلیگرام کے ساتھ ساتھ فیس بک اور انسٹاگرام صارفین کا ڈیٹا اکٹھا کرتا ہے۔

اس ڈیٹا میں گروپس اور پیجز کی پوسٹس، لائکس، فرینڈز، تصاویر، تبصرے اور معلومات شامل تھیں۔میٹا نے جولائی 2022 میں کیس دریافت کرنے کے بعد جو مقدمہ دائر کیا وہ فیس بک کی اس جنگ میں ایک اضافی قدم ہے جسے وہ ڈیجیٹل جاسوسی اور نگرانی کی صنعت قرار دیتا ہے۔

 

 

یہ بھی دیکھیں

امریکا پاک روس توانائی ڈیل روکنے کی کوشش کرے گا، روسی وزیر خارجہ

ماسکو:روسی وزیرخارجہ سرگئی لاؤروف کا کہنا ہے کہ امریکا پاک روس توانائی ڈیل روکنے کی …