جمعرات , 9 فروری 2023

برطانیہ، سیکڑوں پولیس اہلکار برطرف

لندن:لندن پولیس کے سیکڑوں اہلکار اخلاقی بدعنوانی کی وجہ سے برطرف کر دیئے گئے ہیں۔ایک برطانوی پولیس افسر کی جانب سے 24 ریپ کے حالیہ اسکینڈل کے انکشافات کے بعد، ایک سینئر اہلکار نے کہا کہ لندن پولیس کے سیکڑوں اہلکاروں کو جنسی جرائم اور گھریلو زیادتی کے الزام میں برطرف کیے جانے کا امکان ہے۔

برطانیہ کے اعلی پولیس اہلکار نے کہا کہ لندن میں سیکڑوں پولیس افسران کو جنسی جرائم کی سزا میں برطرف کیے جانے کا امکان ہے کیونکہ ایک پولیس افسر کی جانب سے عصمت دری کے متعدد واقعات کے اعتراف کے بعد عوام کا اعتماد بحال کرنے کی کوشش ضروری ہے۔

روئٹرز کے مطابق، لندن کی میٹروپولیٹن پولیس کے جسے حالیہ برسوں میں کئی تسکینڈلز کا سامنا کرنا پڑا ہے، 48 سالہ اہلکار ڈیوڈ کیرک نے ڈیوٹی کے دوران گزشتہ دو دہائیوں میں 24 ریپ کرنے کا اعتراف کیا جبکہ اس کے ساتھی اسے روکنے میں بری طرح ناکام رہے۔

یہ کیس برطانیہ کی سب سے بڑی فورس کا ہے جس میں 43 ہزار افسران اور ملازمین ہیں اور دہشت گردی اور حوالگی جیسے مسائل کے خلاف کارروائی کی قیادت کرنے کی ذمہ داری ہے۔

کمشنر مارک رولی نے جنہوں نے چار ماہ قبل پولیس کی صفائی کی قیادت کے لیے قدم اٹھا رکھا ہے، کہا کہ جنسی اور گھریلو زیادتی کے 1000 الزامات کے سلسلے میں تقریباً 800 افسران کے خلاف تحقیقات جاری ہیں۔ انہوں نے مزید کہا کہ اس عمل کے ایک حصے کے طور پر بہت سی ملازمتیں ختم ہو جائیں گی۔

 

یہ بھی دیکھیں

بھارت کے بعد یورپی ملک میں بھی کسان ٹریکٹر لے کر احتجاج پر نکل آئے

پیرس:بھارت کے بعد فرانسیسی کسان بھی ٹریکٹرز لے کر احتجاج پر نکل آئے۔فرانسیسی دارالحکومت پیرس …