اتوار , 21 اپریل 2024

سر کی چوٹ بڑوں میں موت کی شرح دُگنی کر دیتی ہے، تحقیق

پینسلوینیا: ایک نئی تحقیق میں معلوم ہوا ہے کہ بڑی عمر کے وہ افراد جنہوں نے کبھی بھی معتدل یا شدید نوعیت کی چوٹ سر پر کھائی ہو ان کی موت کی شرح چوٹ نہ لگنے والوں کی نسبت دُگنی ہوتی ہے۔

یونیورسٹی آف پینسلوینیا میں قائم پیریلمن اسکول آف میڈیسن کے محققین کو 13 ہزار افراد کے ڈیٹا کا 32 سال تک جائزہ لینے کے بعد معلوم ہوا کہ وہ افراد جن کو کسی بھی قسم کی سر کی چوٹ لگی تھی ان کی موت کی شرح چوٹ نہ لگنے والوں کی نسبت 2.21 گُنا زیادہ تھی۔

تحقیق کے شرکاء کا انتخاب مِنیسوٹا، میری لینڈ، شمالی کیرولائنا اور مِسیسپی کی چار کمیونیٹیوں سے کیا گیا جن کی اوسط عمر 54 سال تھی۔جبکہ تحقیق کے شرکاء میں 57 فی صد خواتین جبکہ 28 فی صد سیاہ فام شامل تھے۔
وہ افراد جن کے سر پر شدید یا متعدد چوٹیں لگیں تھیں ان کی موت کی شرح ان افراد کی نسبت سر پر چوٹ نہ لگنے والوں کی نسبت 2.87 زیادہ تھی۔

سر کی چوٹ(جو کہ عموماً گاڑی کے تصادم سے، حادثاتی طور پر گرنے سے یا کھیل میں لگتی ہیں) کا تعلق طویل مدتی صحت کے مسائل سے بھی تعلق رکھتا ہے۔ ان مسائل میں معذوری، مرگی، ڈیمینشیا اور فالج شامل ہیں۔

رپورٹ کے مطابق تحقیق کے نتائج عوامی صحت کے لائحہ عمل کی اہمیت کو واضح کرتی ہے جس سے سر کی چوٹ سے بچاؤ اور فوری طبی امداد کے ذریعے شرح مرض اور شرح اموات کو کم کیا جا سکے۔

یہ بھی دیکھیں

ڈائری لکھنے سے ذہنی و مدافعتی صحت پر کیا اثرات مرتب ہوتے ہیں؟

لندن:کمپیوٹرائزڈ اور اسمارٹ موبائل فون کے دور میں اب اگرچہ ڈائریز لکھنے کا رجحان کم …