جمعہ , 31 مارچ 2023

آل خلیفہ کی جیلوں میں سیاسی قیدیوں کے خلاف ہراساں اور طبی غفلت کا سلسلہ جاری

منامہ:مغربی حمایت کے سائے میں بحرین کے سیاسی قیدیوں کے خلاف ظلم و ستم، پابندیاں اور طبی غفلتوں کا سلسلہ بدستور جاری ہے۔ مختلف ذرائع سے ملنے والی اطلاعات کے مطابق، انسانی حقوق کے حلقوں کی جانب سے بحرین میں انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں پر تنقید کے باوجود آل خلیفہ کی جیلوں میں سیاسی قیدیوں کے خلاف ہراساں اور طبی غفلت کا سلسلہ جاری ہے۔

آل خلیفہ حکومت سیاسی قیدیوں کو ان کے حقوق بشمول طبی اور صحت کی سہولیات سے محروم رکھے ہوئے ہے جبکہ بہت سے قیدی طبی سہولیات میں تاخیر اور غیر انسانی حالات کا شکار ہیں۔

اس حوالے سے مختلف ذرائع ابلاغ نے بتایا ہے کہ آزادی اظہار رائے کے قیدی سلمان عبداللہ مکی آل خلیفہ جیل میں متعدد بیماریوں میں مبتلا ہیں تاہم جیل انتظامیہ نے انہیں طبی امداد فراہم کرنے سے انکار کر دیا ہے۔وہ طویل عرصے سے اپنے اہل خانہ سے رابطے سے محروم ہیں اور دانت اور گھٹنے کے شدید درد میں مبتلا ہیں۔

آل خلیفہ کے کرائے کے ایجنٹوں نے پہلی بار سلمان عبداللہ مکی کو 2014 میں ان کے گھر پر حملہ کرکے گرفتار کیا تھا، پھر انہیں 4 ماہ بعد رہا کردیا گیا تھا۔ انہیں 2018 میں دوبارہ گرفتار کیا گیا اور جھوٹے الزامات کے تحت 32 سال قید کی سزا سنائی گئی۔اس بحرینی قیدی کو طبی غفلت سمیت شدید تشدد کا نشانہ بنایا جاتا ہے۔

یہ بھی دیکھیں

صدر مملکت نے جسٹس قاضی فائز عیسٰی کیخلاف ریفرنس واپس لینے کی منظوری دیدی

اسلام آباد: صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی نے جسٹس قاضی فائز عیسٰی سول ریویو پیٹیشن …